Home / کالم / نماز اور موباہل

نماز اور موباہل

انتخاب
بابرالیاس

جدید سائنسی تحقیق سے پتا چلا ہے کہ روزمرہ زندگی میں موبائل فون کا اک حد سے زیادہ استعمال انسانی ذہین اور جسم کے لئے انتہائی نقصان دہ ہے۔۔۔کوئی بھی ایسی ڈیواہس جو بنا تار کے آپ تک آواز ، تصویر یا کسی بھی طرح کا الارم پہنچاتی ہے اس کی شواہوں سے نظر کی کمزوری انسانی دماغ میں ٹیومر بننا اور ایسی ڈیواہس کو زیادہ قریب رکھنے سے ہڈیوں ، گلے اور چسٹ کینسر جیسے لاعلاج امراض پھیل رہے ہیں۔۔اسی سائنسی ایجاد کردہ ڈیواہسز کے بارے میں سائنس ہی بتا رہی ہے کہ یہ انسان کی دماغی نسوں کو کمزور بھی کرتی اور برین ہیمریج کا سبب بھی بنتی ہے۔۔اس سے متاثرہ افراد میں پہلے غصے کا بار بار آنا ۔۔ چڑچڑا پن ۔۔۔ عدم برداشت اور بلڈ پریشر کا مریض ہونا اس کے درمیانی درجے کی نشاندہی کرتا ہے۔۔
دوسری طرف سائنس ہمیں بتاتی ہے کہ مسلمانوں کے نماز کے عمل میں زمین پر سر لگانا ان تمام بیماریوں پر کسی بھی مہنگی سے مہنگی ادویات سے زیادہ موثر ثابت ہوتا ہے۔۔
کیونکہ نماز کے دوران سجدے کی حالت میں جانے سے خون ناصرف پوری قوت کے ساتھ دماغ میں دوڑتا ہے بلکہ یہ عمل نسوں کو کھولتا اور مضبوط بھی کرتا ہے۔ جس سے برین ہیمریج اور نظر کمزور ہونے کے چانس بہت کم ہو جاتے ہیں ۔۔ اور زمین میں موجود کشش ثقل انسانی دماغ میں موجود زہریلی شواہوں کے اثرات کو اپنے اندر کھینچ کر دماغ کو ری فرش کر دیتی ہے۔۔۔
اور یہ عمل انسانی ہڈیوں اور نظر دونوں کو تقویت بخشتا ہے۔۔۔
المختصر نماز کا اہتمام اور اس میں لمبا رکوع اور سجود جہاں عاجزی اور اللہ کی بارگاہ میں انسان کو بلندی کی طرف لے جاتا ہے وہیں اس سے جسمانی تقویت اور ہزاروں بیماریوں سے نجات بھی ملتی ہے۔۔۔
آج اور ابھی سے خشوع و خضوع سے نماز کا اہتمام کریں اور لمبے رکوع و سجود کریں۔۔۔ہم لوگ اجتماعی اور انفرادی طور پر بہت سی جسمانی اور معاشرتی بیماریوں کا شکار لوگ ہیں۔۔۔
بے شک وہی ہے جو بیماروں کو شفا دیتا ہے۔۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے